site
stats
صحت

آدھے سرکے درد کی علامات اوراس کا آسان علاج

سرکے درد کی کئی اقسام ہیں جن میں ایک آدھے سر کا درد بھی ہے جسے درد شقیقہ جبکہ جدید ایلوپیتھی اصطلاح میں مگرین Migraine بھی کہتے ہیں، بعض اوقات یہ پورے سر میں ہوتا ہے مگر آدھے سر میں کم اور آدھے میں زیادہ ہوتا ہے۔

درد شقیقہ شدید نوعیت کا درد ہے جو مریض کو کسی کام کاج کا نہیں چھوڑتا، بھنوؤں کے اوپر اور ملحقہ حصے کا درد بھی درد شقیقہ ہی کی ایک قسم ہے۔

آدھے سر کا درد خون کی شریانوں کے بڑھنے اور اعصاب سے کیمیائی مادوں کے ان شریانوں میں ملنے سے پیدا ہوتا ہے اس کے دورے کے دوران ہوتا یہ ہے کہ کنپٹی کے مقام پر جلد کے نیچے رگ پھول جاتی ہے۔

اس کے نتیجے میں کچھ کیمیائی مادے پیدا ہوکرسوجن اور درد کے ذریعے رگ کو اور پُھلا دیتے ہیں جس سے دفاع میں اعصابی نظام متلی، پیٹ کی خرابی اور قے کا احساس پیدا کرتا ہے علاوہ ازیں اس کی وجہ سے خوراک کے ہضم ہونے کا عمل بھی سست پڑ جاتا ہے۔

دوران خون کے سست پڑنے سے ہاتھ اور پاؤں ٹھنڈے پڑ سکتے ہیں اور روشنی اور آواز کی حساسیت میں اضافہ ہوسکتا ہے جسم کو ایک طرف کمزوری کا احساس بھی ہوسکتا ہے۔


مزید پڑھیں: اسمارٹ فون کا استعمال گردن میں درد کا باعث


درد شقیقہ کی علامتوں میں سے ایک علامت یہ بھی ہے کہ مریض کے سر کے پچھلے حصے میں درد ہوتا ہے، اس کی وجہ پرانا بلڈ پریشر بھی ہوتا ہے۔

 درد شقیقہ کا علاج :

درد کے علاج کے لیے مریض دماغ کو قوت دینے والی غذائیں کھائے، بازار سے چاروں مغز لیں اور اس میں 25 گرام بادام اور اخروٹ, 10 گرام ملا کر پیسنے کے بعد دودھ کے ساتھ اس کا حریرہ بنا کر صبح اور شام کے اوقات میں کھائیں۔


مزید پڑھیں: سر درد سے 5 منٹ میں چھٹکارہ حاصل کریں


علاوہ ازیں روغن لبوب صبا جو پانچ تیلوں کا ایک مرکب ہے، یہ بازار میں بآسانی دستیاب ہے، یہ تیل بھی سر میں روزانہ دو مرتبہ لگائیں، اس کے استعمال سے مرض جلد ختم ہوجائے گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2017 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top