site
stats
اے آر وائی خصوصی

میجر راجہ عزیز بھٹی کا 52واں یومِ شہادت

کراچی : سن انیس سو پیسنٹھ کی پاک بھارت جنگ میں دشمن کے دانت کھٹے کرنے والے میجر راجہ عزیز بھٹی کا آج 52 واں یوم شہادت منایا جارہا ہے ، ان کی بہادری کی داستان آج بھی زبان زد عام ہے۔

aziz-5

میجرراجہ عزیز بھٹی جنگ ستمبر میں جرات و بہادری کی وہ تاریخ رقم کر گئے کہ انہیں نصف صدی بعد بھی قوم عقیدت سے یاد کرتی ہے، عزیز بھٹی شہید سولہ اگست انیس سو تئیس کو ہانگ کانگ میں پیدا ہوئے۔

aziz-1

راجہ عزیزبھٹی قیام پاکستان کے بعد اکیس جنوری انیس سو اڑتالیس کو پاکستان ملٹری اکیڈمی میں شامل ہوئے، انہوں نے بہترین کیڈٹ کے اعزاز کے علاوہ شمشیرِاعزازی و نارمن گولڈ میڈل حاصل کیا اور ترقی کرتے ہوئے انیس سو چھپن میں میجر کا عہدہ سنبھالا۔

aziz-2

انیس سو پینسٹھ میں بھارت نے پاکستان کی جانب پیش قدمی کی کوشش کی تو قوم کا یہ مجاہد سیسہ پلائی ہوئی دیوار ثابت ہوا، سترہ پنجاب رجمنٹ کے اٹھائیس افسروں سمیت عزیز بھٹی شہید نے دشمن کے دانت کھٹے کر دیے۔

1965

لاہور میں ناشتہ کرنے اور شام کو فتح کا جشن منانے کے خواب دیکھنے والا دشمن الٹے پاؤں بھاگنے پر مجبور ہوا۔

میجرراجہ عزیز بھٹی صبح کے ساڑھے نو بجے دشمن کی نقل وحرکت کا دوربین سے مشاہدہ کرنیوالے ہی تھےکہ فولاد کا ایک گولہ انکے سینے کو چیرتا ہوا پار ہوگیا جس کے باعث انہوں نے جام شہادت نوش کیا۔

میجرراجہ عزیز بھٹی کی جرات و بہادری پر انہیں نشان حیدر سے نوازا گیا۔

aziz-3

واضح رہے کہ راجہ عزیز بھٹی شہید آُس عظیم خاندان کے چشم و چراغ تھے کہ جس سے دو اور مشعلیں روشن ہوئیں ایک نشان حید اور نشان جرات پانے والے واحد فوجی محترم میجر شریف جب کہ دوسرے موجودہ آرمی چیف جنرل راحیل شریف ہیں۔

aziz

یاد رہے میجر شریف شہید اور موجودہ چیف آرمی چیف راحیل شریف سگے بھائی ہیں جب کہ میجر عزیز بھٹی اِن کے ماموں ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2017 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top