site
stats
انٹرٹینمںٹ

قومی کتاب میلے میں حادثے کا شکار‘نوجوان شاعرہ انتقال کرگئیں

قومی کتاب میلے میں اسٹیج سے گر کر زخمی ہونے والی نوجوان شاعرہ فرزانہ ناز کئی دن اسپتال میں زندگی اور موت کی کشمکمش میں مبتلا رہنے کے بعد خالقِ حقیقی سے جاملیں۔

تفصیلات کے مطابق قومی کتاب میلے کی اختتامی تقریب کے فوراً بعد پاک چائنا فرینڈ شپ سینٹر کے مین آڈیٹوریم کے 12 فٹ بلند اسٹیج سے نیچے گرکرنوجوان شاعرہ فرزانہ ناز شدید زخمی ہوئیں اور پھر ان زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے گزشتہ روز انتقال کرگئیں۔

مین آڈیٹوریم میں اسٹیج اورحاضرین کے درمیان حد فاصل رکھنے کے لیے ایک خالی جگہ ہے جس کا فرش سنگِ مرمر کا ہے۔ فرزانہ سیڑھی سے چڑھتے ہوئے اپنا توازن برقرار نہ رکھ سکیں اور سر کے بل اس خالی جگہ میں جا گریں۔

انہیں فوراً شفاانٹرنیشنل ہسپتال پہنچایا گیا لیکن وہ ہوش میں نہ آسکیں۔اسپتال ذرائع کے مطابق ان کے سر اور ریڑھ کی ہڈی پر شدید چوٹیں آئی تھیں‘ انہیں انتہائی نگہداشت کے وارڈمیں رکھا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہوئیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پہلے بھی کئی افراد اس کھائی نما جگہ میں گر کر زخمی ہوچکے ہیں، لیکن انتظامیہ اس تعمیری نقص کو درست کرنے کے لیے آمادہ نظر نہیں آتی۔

فرزانہ ناز کا گزشتہ سال ہی پہلا شعری مجموعہ ’ہجرت مجھ سے لپٹ گئی ہے‘ شائع ہوا تھا جسے ادبی حلقوں میں بے پناہ پذیرائی حاصل ہوئی تھی۔

معروف محقق و شاعرکا اظہارِ افسوس


اردو ڈکشنری بورڈ کے سربراہ اور معروف محقق و شاعر عقیل عباس جعفری نے اس واقعہ پراظہارِ افسوس کرتے ہوئے کہا کہ ’’واقعہ مجھ سمیت متعدد لوگوں کی نظروں کے سامنے پیش آیا مگر ہم کچھ بھی نہ کرسکے۔ انسان واقعی کتنا بے بس ہے‘‘۔

انہوں نے توقع بھی ظاہر کی ہے کہ ’’اسلام آباد کے مئیر شیخ انصرعزیز جو سی ڈی اے کے چئیرمین بھی ہیں اور اس فرینڈ شپ سینٹر کے نگراں بھی، وہ اس تعمیری نقص کو فوراً ٹھیک کروائیں گے‘‘۔ انکا کہنا تھا کہ فرحانہ ناز تو اب واپس نہیں آسکتی لیکن شاید اس سے آئندہ ہونے والے ممکنہ حادثات کا امکان ختم ہوسکے ۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئرکریں۔ 

Please follow and like us:

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ [email protected] اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top